اسمبلی کا تعارف
اسمبلی کا تعارف

بسم اللہ الرحمن الرحیم

اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کا تعارف


ہمیں فخر ہے اس بات پر کہ ہم ایسے مذہب کے ماننے والے ہیں جس کے بانی حکم خدا سے محمد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم ہیں اور امیر المومنین علی ابن ابی طالب ہیں جو انسانیت کو غلامی کی تمام زنجیروں سے رہائی دلانے آئے تھے۔
ہمیں فخر ہے کہ ائمہ طاہرین؛ علی بن ابی طالب سے لے کر منجی عالم بشریت حضرت مہدی صاحب الزمان (عجل اللہ تعالی فرجہ) تک کہ جو حکم خدا سے زندہ اور حاضر و ناظر ہیں، سب ہمارے ائمہ ہیں۔
اور ہمیں فخر ہے کہ ہمارا مذہب جعفری ہے اور ہماری فقہ جو ایک بیکراں سمندر ہے مذہب جعفری کا ایک حصہ ہے۔
اور ہم اپنے تمام ائمہ طاہرین (ع) پر فخر محسوس کرتے اور ان کی اطاعت کا عہد کرتے ہیں۔

(امام خمینی (رہ) کے وصیت نامہ سے اقتباس)
--------------------------------------------------------------------------
آج عالم اسلام کو اہل بیت(ع) کے پیغام کی سخت ضرورت ہے۔
رہبر انقلاب اسلامی:
(اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کی جنرل اسمبلی کے اجلاس سے خطاب؛ اگست ۲۰۰۷)
------------------------------------------------------------------------

آج ہر دور سے زیادہ پوری دنیا میں اہل بیت(ع) کے پیروکاروں کو آپسی ہمدلی، ہمدردی اور ہمفکری کی ضرورت ہے۔
اور یہ اسلامی اتحاد کے قیام کی راہ میں ایک موثر اقدام ہو گا۔
رہبر انقلاب اسلامی:
(اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کی جنرل اسمبلی کے اجلاس سے خطاب؛ اکتوبر ۲۰۰۳)

 

فہرست


مقدمہ
پہلی فصل؛ کلیات


اہداف و مقاصد
اسمبلی کی تنظیم و ارکان

 

دوسری فصل؛ اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی بین الاقوامی میدان میں


سپریم کونسل
جنرل اسمبلی کے اجلاس
مقامی تنظیمیں اور دفاتر
دینی ادارے اور ثقافتی مراکز
خواتین اور گھرانے سے متعلق سرگرمیاں
سماجی سرگرمیاں اور ثقافتی حمایت
مساجد، امام بارگاہیں اور عام المنفعہ مراکز کی تعمیر و حمایت کمیٹی
بین الاقوامی اجلاس اور کانفرنسوں کا انعقاد اور تعاون
اہل بیت(ع) کے پیرو مسلمانوں کے حقوق کا دفاع
بین الاقوامی اہل البیت(ع) یوتھ فاؤنڈیشن
مقامی مبلغین کی حمایت
بین الاقوامی عاشورا فاؤنڈیشن
مقامی تنظیموں اور انجمنوں کی حمایت
دیگر شیعہ فرقوں کی حمایت
اسمبلی کا موقف اور بیانیہ
خصوصی مناسبتوں کی سرگرمیاں
ہمفکر اداروں کے ساتھ تعاون
قانونی تنظیمیں اور NGO

 

تیسری فصل؛ اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی ترجمہ و تحقیقات کے میدان میں


تحقیق
ترجمہ
طباعت، اشاعت اور تقسیم
کتب خانہ اور مرکز دستاویزات
جرائد
سوالات و شبہات کے جوابات
مصنفین، محققین اور مستبصرین کی حمایت
ایران میں اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی

 

چوتھی فصل؛ اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی تعلیم و تربیت کے میدان میں


اہل بیت(ع) انٹرنیشنل یونیورسٹی
تحت حمایت اسکول
یونیورسٹیوں کے ساتھ تعاون
آنلاین تعلیم
کتب خانوں کا قیام
علمی حمایت اور تعلیم کے لیے وظیفہ کا اہتمام
علمی و ثقافتی کورسز

 

پانچویں فصل؛ اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی معیشتی اور حمایتی امور میں


مجاب ٹریڈ ڈویلپمنٹ کمپنی (تجارت)
افریقہ میں حمایتی معاشی سرگرمیاں
محروم ممالک میں قرض الحسنہ صندوق کا اجراء
مجاب کوثر کوآپریٹو کمپنی
عراق میں اقتصادی دفتر (زیر افتتاح)
شیعہ خیّر افراد کی کمیٹی
غیر متوقع حادثات میں حمایت
مساجد کی تعمیر میں امداد رسانی

 

چھٹی فصل؛ اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی فن و میڈیا کے میدان


اہل البیت(ع) نیوز ایجنسی۔ابنا۔
اہل البیت(ع) عظیم پورٹل
اہل البیت(ع) پورٹل کی بعض سیٹلائٹ ویب سائٹس
اہل بیت(ع) پورٹل کی منتخب سائٹس
اسلامی سافٹ ویئرز
پیغمبر اعظم(ع) عظیم انعام
عالمی یوم القدس بین الاقوامی کارٹون فیسٹیول
آرٹ اور فن پارے
اسلامی صوتی اور تصویری میڈیا کی حمایت

 

ساتویں فصل؛ مخاطبین کے ساتھ گفتگو


خالص محمدی اسلام کی نشر و اشاعت میں تعاون
فکری اور علمی تعاون
اسمبلی کے ساتھ رابطہ

.................................................................................

مقدمہ
بسم الله الرحمن الرحیم
قال رسول الله صلی الله علیه و آله: « إنی تارک فیکم الثقلین أحدهما أکبر من الآخر کتاب الله حبل ممدود من السماء إلی الأرض و عترتی اهل بیتی ؛ و إنهما لن یفترقا حتی یردا علی الحوض ». (۱)
مرسلِ اعظم، سرکارِ دوعالم حضرت محمّد مصطفیٰ صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم نے اپنے آخری فرمان میں امّت ِ مسلمہ کو قرآنِ کریم اور اہلِ بیت عصمت و طہارت( علیہم السّلام ) کی پیروی کی گرانقدر نصیحت فرمائی، اس وصیت کی رو سے ائمۂ طاہرین علیہم السلام دنیا کے تمام صاحبانِ دیانت کا محور اور مرجع ہیں جو قرآنِ ناطق کی طرح دینی اور دنیوی امور میں صاحبانِ ایمان کی منزلِ کمال کی طرف ہدایت اور رہنمائی کرتے ہیں۔
اگرچہ محبّان ِ اہلِ بیت علیہم السّلام نے اپنے پیشواؤں کو اپنا نمونۂ عمل قرار دیتے ہوئے تاریخ کے ہر دور میں دینِ اسلام، مسلمانوں اور خالص اسلامی ثقافت کے دفاع اور حفاظت کا قابل فخر کارنامہ انجام دیا ہے اور اس سلسلہ میں کسی بھی کوشش اور قربانی سے دریغ نہیں کیا ہے لیکن محبّان ِ اہل بیت علیہم السّلام کے درمیان تبادلۂ خیال کے سازگار ماحول کی فراہمی، ان کے مشترکہ مفادات کی حفاظت، عالم ِ اسلام کے معاشرتی اور ثقافتی مسائل کو حل کرنے کے لئے باہمی تعاون اور ہم آہنگی کی ضرورت نیز امّتِ مسلمہ کے عظیم مادی اور معنوی وسائل سے استفادہ کے پیشِ نظر ایک ایسے جامع و ہمہ گیر ادارہ کا قیام ناگزیر تھا جو ان ذمّہ داریوں کا بیڑا اٹھائے ۔
اسی ضرورت کے تحت اہلِ بیت علیہم السلام کے چاہنے والے کچھ دانشوروں نے ولیٔ فقیہ اور عالمِ شیعت کی جلیل القدر مرجعیّت کی زیرنگرانی ایک غیرسرکاری اور عالمی ادارہ کے طور پر "اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی " کا سنگِ بنیاد رکھا تاکہ شیعیان ِ اہل بیت ِ عصمت و طہارت (ع) تک رسائی، ان میں ہم آہنگی، تعلیم اور دیگر شعبوں میں ان کی حمایت کی سنگین ذمّہ داری کا بیڑا اٹھا سکے ۔
موجودہ دنیا میں حالات کی برق رفتار تبدیلی، زمان و مکان کے فاصلوں کے خاتمہ، مواصلاتی انقلاب اور بین الاقوامی اداروں کےمؤثّر کردار نے بھی اس ادارہ کی اہمیت میں اضافہ کر دیا ہے ۔
پروردگارِ عالم کے لطف و کرم کے طفیل اس عالمی ادارہ نے آج تک بہت سے شائستہ اقدامات کئے ہیں، یہ ادارہ اس عظیم ذمہّ داری کو جاری و ساری رکھنے کے لئے دنیا کے تمام مسلمانوں کی طرف صدق ِ دل سے اخوّت، دوستی اور تعاون کا ہاتھ بڑھاتا ہے ۔

یہ تحریر اہل بیت اسمبلی کی مختصر تاریخ، اس کے اغراض و مقاصد، اس کی تنظیم اور اہم سرگرمیوں پر مشتمل ہے ۔

۱۔ صحیح مسلم، ج 7 ؛ سنن ترمذی، ج 2 ؛ مسند احمد بن حنبل؛ ج 3 ؛ مستدرک حاکم، ج 3 و ...

 

پہلی فصل؛ کلیات
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اغراض و مقاصد
اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے قیام اور اس کی فعّالیت کے اہم ترین اغراض و مقاصد مندرجہ ذیل ہیں :
1۔ محمّدی(ص) خالص اسلام کی ثقافت اور تعلیمات کا احیاء اور فروغ، قرآن کریم ، پیغمبراکرم صلی اللہ علیہ و آلہ اور ائمۂ طاہرین علیہم السّلام کی سنّت کے حریم کی حفاظت۔
2۔ اسلام، پیغمبر اکرم صلی اللہ علیہ و آلہ، قرآن کریم اور اہل بیت اطہار علیہم السلام کا دفاع
3۔ تمام فرزندانِ توحید بالخصوص اہل بیت علیہم السّلام کے پیروکاروں میں اتّحاد و بھائی چارہ کا جذبہ پیدا کرنا۔
4۔ دنیا کے تمام مسلمانوں کے وجود اور محبّانِ اہل بیت علیہم السّلام کے حقوق کا دفاع اور ان کی حمایت۔
5۔ دنیا میں اہلِ بیت علیہم السّلام کے پیروکاروں کے مادی اور معنوی بنیادی ڈھانچہ کا فروغ و استحکام ۔
6۔ پوری دنیا کے شیعوں کی ثقافتی، سیاسی، معاشی اور سماجی پوزیشن کی اصلاح و ترقّی کے لئے مدد کرنا۔
7۔ شیعیانِ عالم کو میڈیا کی مظلومیت اور علمی و معاشی پسماندگی سے نجات دلانا۔
8۔ تمام عالم انسانیت اور اقوام عالم کے درمیان امن، دوستی، ہمدردی اور باہمی تعاون کی فضا قائم کرنے کی کوشش کرنا.


اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کا ڈھانچہ اور ارکان
الف) جنرل اسمبلی
اس ادارہ کی جنرل اسمبلی پوری دنیا کے شیعوں کے اہم دانشوروں، مفکّروں اور ممتاز شخصیات پر مشتمل ہے۔
اس اسمبلی کے اراکین ہمیشہ ہی " اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی " سے رابطے میں رہتے ہیں اور ہر چار سال میں ایک مرتبہ پالیسیاں مرتب کرنے، مواقع سے فائدہ اٹھانے، چیلنجز کا حل نکالنے اور فعالیت کی راہیں تلاش کرنے کی غرض سے ایک مشترکہ اجلاس کی صورت میں جمع ہوتے ہیں۔

ب) سپریم کونسل
سپریم کونسل، جنرل اسمبلی کے بعض ممتاز اراکین پر مشتمل ہے جو اہل بیت (ع) عالمی اسمبلی کی پالیسیوں، منصوبوں اور اس کے بجٹ کو منظوری دیتے ہیں اور اس کی فعّالیتوں پر نگرانی رکھتے ہیں۔

ج) سیکریٹری جنرل
سیکریٹری جنرل ،اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کا سب سے اعلیٰ عہدیدار ہے جسے اس اسمبلی کو چلانے، اس کی پالیسیوں اور منصوبوں کے نفاذ پر نگرانی کے لئے سپریم کونسل کی طرف سے منتخب کیا جاتا ہے ۔
اب تک اسمبلی کو چلانے کے لیے پانچ مرتبہ سکریٹری جنرل کا انتخاب کیا جا چکا ہے، منتخب شدہ افراد میں سے ہر ایک عالم اسلام کی برجستہ شخصیت رہا ہے:
۱: آیت اللہ محمد علی تسخیری؛ مئی ۱۹۹۰ سے اگست ۱۹۹۹ تک۔
۲: ڈاکٹر علی اکبر ولایتی؛ اگست ۱۹۹۹ سے اکتوبر ۲۰۰۲ تک۔
۳: آیت اللہ محمد مہدی آصفی؛ اکتوبر ۲۰۰۲ سے اپریل ۲۰۰۴ تک۔
۴: آیت اللہ محمد حسن اختری اپریل ۲۰۰۴ سے ستمبر ۲۰۱۹ تک۔
۵۔ آیت اللہ رضا رمضانی ستمبر ۲۰۱۹ سے اب تک۔

د) اسمبلی کے ذیلی شعبے
اس اسمبلی میں سرگرم ذیلی شعبے "بین الاقوامی شعبہ" ،"شعبۂ ثقافت" ،"انتظامی امور کا شعبہ"، " پارلیمانی اور قانونی شعبہ" اور "معاشی امور کا شعبہ" نیز "دفتر سیکریٹری جنرل" سے عبارت ہیں۔
یہ ذیلی شعبے درج ذیل امور میں فعالیت کرتے ہیں:
۔ جنرل اسمبلی کے اراکین، مقامی تنظیموں (NGO) اور عالم اسلام کی اہم شخصیتوں سے رابطہ رکھنا اور ان کی حمایت کرنا؛
۔ مختلف زبانوں میں اسلامی تعلیمات کے مواد پر مبنی کتابوں، رسائل ، سافٹ ویئرز اور ثقافتی مصنوعات کی تالیف اور اشاعت؛
۔ علاقائی، بین الاقوامی اور بین الاسلامی کانفرنسوں کا انعقاد؛
۔ اہل بیت(ع) کے پیروکاروں کی مدد کی غرض سے فلاحی اور معاشی سرگرمیاں؛
۔ دینی اداروں اور اسلامی مراکز کے ساتھ باہمی تعاون کے معاہدے کرنا؛
۔ اہل بیت (ع) کے پیروکاروں کی حوصلہ افزائی اور مذہبی تنظیموں اور ثقافتی اداروں کا قیام؛
۔ دینی فعال کارکنان اور مقامی مبلغین کی حمایت؛
۔ سامراجی میڈیا کے مقابلے میں درست اور مفید معلومات فراہم کرنا
۔ امام بارگاہوں، اسلامی مراکز، لائبریریوں، طبی مراکز اور عوامی فلاحی اداروں کا قیام؛
۔ ضرورتمندوں، غریبوں نیز قدرتی آفات اور دھشتگردی سے متاثر افراد کی مدد کرنا؛
۔ علمی ترقی اور تعلیمی پیشرفت کے لیے اہل بیت(ع) کے پیروکاروں کی حمایت کرنا۔

 

 

یہ حصہ مکمل ہو گا

عالمی اہل بیت اسمبلی

اہل بیت (ع) عالمی اسمبلی، ایک عالمی اور غیر سرکاری تنظیم کی حیثیت سے، عالم اسلام کی ممتاز شخصیات کے ذریعے تشکیل دی گئی ہے۔ اہل بیت علیہم السلام کو مرکز فعالیت اس لیے انتخاب کیا گیا ہے کیونکہ اسلامی تعلیمات میں قرآن کریم کے ہمراہ، اہل بیت اطہار علیہم السلام ایک مقدس مرکزیت کی حیثیت رکھتے ہیں جنہیں تمام مسلمان مانتے ہیں۔

اہل بیت (ع) عالمی اسمبلی کا آئین نامہ آٹھ فصلوں اور تینتیس شقوں پر مشتمل ہے۔

  • ایران - تهران - بلوارکشاورز - نبش خیابان قدس - پلاک 246
  • 888950827 (0098-21)
  • 888950827 (0098-21)

ہم سے رابطہ کریں

موضوع
دوستوں کوارسال کریں
خط
6-3=? سیکورٹی کوڈ