سیکریٹری جنرل سے متعلق خبریں

آیت اللہ رمضانی: امن کا قیام عدالت، معنویت اور عقلانیت کے تحقق سے ممکن ہے

آیت اللہ رمضانی: امن کا قیام عدالت، معنویت اور عقلانیت کے تحقق سے ممکن ہے

اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سربراہ نے عالمی کانفرنس برائے صلح و عدالت کو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دین اسلام کا رحمانی پہلو دنیا میں عدل و انصاف کی بدولت امن کے قیام کا خواہاں ہے۔
اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے زیر اہتمام منعقدہ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے آیت اللہ رضا رمضانی نے کہا کہ سب سے پہلے یہ واضح ہونا چاہیے کہ عالمی امن کن ملاک و معیار کا حامل ہو سکتا ہے؟۔ امن کے قیام کا اہم ترین معیار عدالت ہے اگر کوئی ظلم و جور کو اپنا پیشہ بنا لے اور اس کے بعد امن کا دعویٰ کرے تو کوئی عقل سلیم ایسے دعوے کو قبول نہیں کرے گی۔
انہوں نےمزید کہا: خدا کی راہ میں امن کا قیام در حقیقت انسانی مقاصد کے تحقق کی راہ میں امن کا قیام ہے جو یقینا عدالت، معنویت اور عقلانیت کے تحقق سے وجود پا سکتا ہے وہ لوگ جن کے اندر استکباریت، آمریت، سامراجیت اور استحصال کی عادت رچ بس گئی ہو وہ کبھی بھی امن کی بات نہیں کر سکتے اگر حقیقت کی نگاہ سے دیکھا جائے تو دنیا میں جنگ کا طبل بجانے والے وہی مستکبر اور ستمگر لوگ ہیں۔
اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل نے مزید کہا: اسلام بلکہ الہی ادیان جنگ کے حامی نہیں تھے اور انسانی معاشرے میں کبھی جنگ کو رواج نہیں دیتے تھے الہی ادیان انسان کی عظمت اور بزرگی کے قائل ہیں، اسلام رحمت اور محبت پر مبنی عقلانیت اور معنویت کا دین ہے۔ لہذا پیغمبر اسلام جو فرماتے ہیں: ’’انما بعثت رحمتا‘‘  میں اس لیے مبعوث ہوا ہوں کہ انسانی معاشرے میں رحمت اور محبت کو رواج دوں، اور قرآن کریم بھی جو فرماتا ہے کہ ’’وما ارسلناک الا رحمۃ للعالمین‘‘ ہم نے آپ کو صرف اس لیے مبعوث کیا کہ دنیا والوں کے لیے رحمت بن کر رہیں، یہ اس بات کی عکاسی کرتا ہے کہ اسلام کی بنیاد رحمت اور محبت پر رکھی گئی ہے۔
انہوں نے آخر میں مسلمانوں کو قرآنی تعلیمات پر عمل کرتے ہوئے آپس میں مہر و محبت سے رہنے کی دعوت دی اور معاشرے میں عدالت کی بنا پر امن کے قیام کا مشورہ دیا۔

ہفتہ دفاع مقدس کی مناسبت سے اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل کا ہدیہ تبریک

ہفتہ دفاع مقدس کی مناسبت سے اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل کا ہدیہ تبریک

ہفتہ دفاع مقدس کی آمد پر اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل آیت اللہ رمضانی سے اسلامی جمہوریہ ایران کے ایک اعلیٰ فوجی آفیسر نے ملاقات کی۔
اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل نے اس ملاقات کے دوران اسلامی جمہوریہ ایران کی فوج کے ڈپٹی چیف انٹلیجنس بریگیڈیئر جنرل ’جلالی نسب‘ کو مبارک باد پیش کی۔
انہوں نے اپنی گفتگو میں امام خمینی(رہ)، شہدائے انقلاب اور شہدائے دفاع مقدس کو یاد کرتے ہوئے ان کے راستے کو جاری رکھنے کا عزم ظاہر کیا۔
بریگیڈیئر جنرل جلالی نسب نے آیت اللہ رمضانی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے علاقے کے حالات کے حوالے سے چند اہم نکات کی طرف اشارہ کیا۔

cc09654e0e946c9526be66ff6b4175d9_866.jpg

b18d9b9fed74ce87e1786b3393202914_376.jpg

30b8a71302705f254dc69fa1a7b749cb_713.jpg


خیال رہے کہ ہفتہ دفاع مقدس اسلامی جمہوریہ ایران پر عراق کی بعثی حکومت کی طرف سے کئے گئے پہلے حملے اور ایران کی جانب سے کئے گئے دفاع کے طور پر ۲۱ ستمبر سے ۲۷ ستمبر تک منایا جاتا ہے۔
۲۱ ستمبر ۱۹۸۰ کو عراق کی بعثی حکومت کے صدر صدام ملعون نے ایران کے نوپا انقلاب کو نابود کرنے کے لیے ایران پر حملوں کا آغاز کیا اور ۸ سال تک یہ ظالمانہ جنگ جاری رہی۔ اس جنگ کے نتیجے میں ۱۹۶۸۳۷ ایران باشندے شہید ہوئے جن میں سے ۱۰۱۹۶ عام شہری تھے جو فضائی اور میزائل حملوں کا نشانہ بنے۔

قرآن اور پیغمبر اسلام (ص) کی شان میں ہونے والی گستاخی پر اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کا ردعمل

قرآن اور پیغمبر اسلام (ص) کی شان میں ہونے والی گستاخی پر اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کا ردعمل

یورپ میں حالیہ دنوں کے دردناک اور افسوسناک واقعات پر اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی نے ردعمل ظاہر کرتے ہوئے سویڈن میں قرآن کریم کی بے حرمتی اور فرانس میں چارلی ہیبڈو کے ذریعے چھاپے گئے کارٹون کی شدید مذمت کی ہے۔  
آیت اللہ رمضانی نے اپنے بیان میں روشن خیال شخصیتوں، انسانی حقوق تنظیموں اور مغربی حکومتوں سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ صلح پسندانہ رویوں سے اپنے معاشرے میں پائے جانے والے اس طرح کے نفرت انگیز اور دین مخالف اقدامات کا مقابلہ کریں۔
انہوں نے زور دے کر کہا: انتہا پسندی کے دونوں رخ - یعنی مذہبی انتہا پسندی، جو داعش اور بوکو حرام جیسے گروہوں کی شکل میں ظاہر ہوئی اور اسلام مخالف انتہا پسندی جو "چارلی ہیڈو" یا ’’اسٹرام کورس‘‘ جیسے گروہوں کے ذریعے سامنے آئی ایک ہی تلوار کے دو کنارے ہیں جنہوں نے انسانی معاشروں کی عقلانیت، امنیت، جمہوریت، صلح، آزادی، معنویت اور سکون کو نشانہ بنا دیا ہے۔

تصویری رپورٹ/مسجد علی بن الحسین میں منعقدہ مجلس امام سجاد (س) کو آیت اللہ رمضانی کا خطاب

تصویری رپورٹ/مسجد علی بن الحسین میں منعقدہ مجلس امام سجاد (س) کو آیت اللہ رمضانی کا خطاب

۱۲ محرم الحرام امام زین العابدین (ع) کے یوم شہادت کی مناسبت سے تہران کی مسجد علی بن الحسین میں منعقدہ مجلس عزا سے اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل آیت اللہ رمضانی نے خطاب کیا۔

گیلان مرقد فاطمہ اخریٰ (س) میں مجلس عزا کو آیت اللہ رمضانی کا خطاب

گیلان مرقد فاطمہ اخریٰ (س) میں مجلس عزا کو آیت اللہ رمضانی کا خطاب

گیلان میں واقع امام رضا علیہ السلام کی بہن فاطمہ اخریٰ (ع) کے مرقد میں محرم الحرام کے عشرہ اولیٰ کے عنوان سے منعقدہ مجالس سے اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل آیت اللہ رمضانی نے خطاب کیا۔

رشت مرقد فاطمہ اخریٰ (س) میں محرم کی پہلی مجلس سے آیت اللہ رمضانی کا خطاب

رشت مرقد فاطمہ اخریٰ (س) میں محرم کی پہلی مجلس سے آیت اللہ رمضانی کا خطاب

گیلان میں واقع امام رضا علیہ السلام کی بہن فاطمہ اخریٰ (ع) کے مرقد میں محرم الحرام کے عشرہ اولیٰ کے عنوان سے منعقدہ مجالس سے اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل آیت اللہ رمضانی نے خطاب کیا۔

اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی اور جامعۃ المصطفیٰ کے درمیان باہمی تعامل موجود ہے: آیت اللہ رمضانی

اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی اور جامعۃ المصطفیٰ کے درمیان باہمی تعامل موجود ہے: آیت اللہ رمضانی

اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی اور جامعۃ المصطفیٰ (ص) بہترین باہمی تعامل اور طاقتور ترین عوامی سفارتکاری کے حامل ہیں، جامعۃ المصطفیٰ بین الاقوامی سطح پر طلاب کی تربیت کے ذریعے ایک روحانی اور انصاف پسند فضا قائم کر سکتا ہے۔ جامعۃ المصطفیٰ العالمیہ کے سربراہ بورڈ کے غیر ملکی نمائندوں کے ساتھ ہوئے چودہویں اجلاس کے پہلے روز اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل آیت اللہ رمضانی نے ان بیانات کا اظہار کیا۔
انہوں نے مزید کہا کہ جامعۃ المصطفیٰ اور پوری دنیا میں اس علمی مرکز کے فارغ التحصیل افراد دینی تبلیغ کے میدان میں موثر کردار ادا کر رہے ہیں۔
اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل نے کہا کہ موجودہ دور کی علمی  اور دینی ضرورتوں کو پورا کرنے اور مذہب اہل بیت(ع) کی تعلیمات کو عام کرنے کے لیے جامعۃ المصطفیٰ کے پاس بہترین مواقع فراہم ہیں جن سے بخوبی فائدہ اٹھانے کی ضرورت ہے۔

ایام حج کی مناسبت سے اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل کا بیان

ایام حج کی مناسبت سے اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل کا بیان

 ایام حج کے موقع پر اہل بیت (ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل نے اپنے جاری کردہ پیغام میں کہا ہے کہ یہ حج جو ’حج ابراہیمی‘ کے نام سے معروف ہے اس کے ہر ایک رکن میں حضرت ابراہیم جو پرچمدار توحید تھے کا وجود جلوہ نمائی کرتا ہوا نظر آتا ہے۔
آیت اللہ رضا رمضانی نے کہا کہ حضرت ابراہیم حقیقت میں ایک امت تھے جنہوں نے بت پرستی اور استکباریت کے مقابلے میں ایک نہضت قائم کر دی، ابراہیم پہلے مسلمان تھے ابراہیم مقام امامت پر فائز تھے اس کے بعد کہ اللہ نے ان کا سخت امتحان لیا اور وہ ہر امتحان میں کامیاب ہوئے تو پروردگار عالم نے انہیں مقام امامت پر فائز کیا۔
انہوں نے مزید کہا: حضرت ابراہیم خانہ خدا کے خدمتگزار تھے، وہ کعبہ کے معمار اور بانی تھے، ابراہیم حکم خدا کے سامنے تسلیم محض تھے وہ محبوب خدا تھے، ابراہیم حلیم اور بردبار تھے، ابراہیم بت شکن تھے ابراہیم پر خدا نے اپنا مخصوص سلام کیا، ابراہیم مہمان نواز اور بڑے سخی تھے، اللہ کے شکرگزار اور سچے بندے تھے، اپنے وعدے کے پابند اور اللہ پر بھروسہ اور توکل کرنے والے تھے۔
اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل نے حج کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حج تمام اسلامی امتوں کے درمیان بین الاقوامی سطح پر رابطہ برقرار کرنے کا اہم ذریعہ ہے۔ اقوام عالم اپنی گوناگوں ثقافتوں کے ساتھ ایک میدان میں اکٹھا ہوتے ہیں اور ایک عظیم عالمی اجتماع کو وجود میں لاتے ہیں۔
انہوں نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ حج سے ہمیں للاہیت کا درس حاصل کرنا چاہیے کہا کہ حج ایسی جگہ ہے جہاں صرف تصور خدا پایا جاتا ہے جہاں اللہ کی جانب سے دعوت ہوتی ہے اور انسان مسلسل ندائے الہی پر لبیک کہتے ہوئے خود کو بارگاہ خداوندی میں محسوس کرتا ہے۔
آیت اللہ رمضانی نے کہا: حج امت اسلامی کے اتحاد کا باعث بننا چاہیے دشمنوں کی ہمیشہ یہ کوشش رہی ہے کہ مسلمانوں کے درمیان اختلاف کا بیج بوئیں اور انہیں ایک دوسرے سے دور کر کے ایک دوسرے کا جانی دشمن بنائیں۔
انہوں نے اس بات پر تاکید کرتے ہوئے کہ اختلاف مسلمانوں کی کمزوری کا سبب بنتا ہے کہا حج سے مسلمان فائدہ اٹھا کر اپنے سیاسی، سماجی، معاشرتی اور ثقافتی میدانوں میں اکٹھا ہو سکتے ہی۔
انہوں نے اس بات پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہ اس سال کورونا وائرس کی وجہ سے امت مسلمہ حج کی عظیم نعمت سے محروم ہو گئی کہا کہ اگر متعلقہ حکومت صحیح منصوبہ بندی کرتی تو دنیا کے تمام اسلامی ممالک سے محدود تعداد میں مسلمانوں کو حج بیت اللہ کی دعوت دے سکتی تھی لیکن افسوس کے ساتھ ایسا نہیں ہوا۔

[12 3 4 5  >>  

عالمی اہل بیت اسمبلی

اہل بیت (ع) عالمی اسمبلی، ایک عالمی اور غیر سرکاری تنظیم کی حیثیت سے، عالم اسلام کی ممتاز شخصیات کے ذریعے تشکیل دی گئی ہے۔ اہل بیت علیہم السلام کو مرکز فعالیت اس لیے انتخاب کیا گیا ہے کیونکہ اسلامی تعلیمات میں قرآن کریم کے ہمراہ، اہل بیت اطہار علیہم السلام ایک مقدس مرکزیت کی حیثیت رکھتے ہیں جنہیں تمام مسلمان مانتے ہیں۔

اہل بیت (ع) عالمی اسمبلی کا آئین نامہ آٹھ فصلوں اور تینتیس شقوں پر مشتمل ہے۔

  • ایران - تهران - بلوارکشاورز - نبش خیابان قدس - پلاک 246
  • 888950827 (0098-21)
  • 888950827 (0098-21)

ہم سے رابطہ کریں

موضوع
دوستوں کوارسال کریں
خط
3*8=? سیکورٹی کوڈ