اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی بین الاقوامی میدان میں
اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی بین الاقوامی میدان میں

جنرل اسمبلی
مئی 1990 میں، تہران میں عالم اسلام کے 300 سے زیادہ دانشوروں اور مفکرین بالخصوص اہل بیت (ع) کے پیروکاروں کی شرکت کے ساتھ ایک عالمی اجلاس منعقد ہوا۔ اجلاس کے اختتام پر، شرکاء نے حضرت آیت اللہ العظمیٰ سید علی خامنہ ای کی خدمت میں اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کی تشکیل کی اجازت پر مبنی درخواست پیش کی جسے آپ نے منظور کر لیا۔
ان افراد نے اہل بیت (ع) عالمی اسمبلی کی پہلی جنرل اسمبلی کو تشکیل دیا۔
"جنرل اسمبلی" اب سیکڑوں بااثر شیعہ شخصیات کی موجودگی سے اہل بیت (ع) عالمی اسمبلی کی ایک اہم ستون ہے جو علاقائی اور بین الاقوامی سطح پر مختلف کانفرنسوں کے انعقاد سے اسمبلی کے منظور شدہ پروگراموں کو انجام دیتی اور نئے کاموں کی تجویز پیش کرتی ہے۔  

سپریم کونسل
اہل بیت (ع) عالمی اسمبلی کی تمام سرگرمیاں سپریم کونسل کی طے شدہ پالیسیوں کی بنیاد پر انجام دی جاتی ہیں۔
یہ کونسل مختلف جغرافیائی علاقوں اور ان خطوں سے تعلق رکھنے والی شیعہ شخصیات اور نامور افراد پر مشتمل ہے جہاں اہل بیت (ع) کے پیروکاروں کی قابل ذکر تعداد رہتی ہے۔ جیسے ایران ، عراق ، ہندوستان ، پاکستان ، افغانستان ، لبنان ، بحرین وغیرہ وغیرہ۔

سپریم کونسل کا اجلاس
اہل بیت (ع) عالمی اسمبلی کی سپریم کونسل کا اجلاس سال میں دو بار اپنے ایرانی اور غیر ایرانی ممبروں کی اکثریت کی موجودگی میں ہوتا ہے۔ سالانہ اجلاس کے علاوہ ، کبھی کبھار خصوصی موضوعات یا غیر متوقع واقعات پر ہنگامی میٹنگیں بلائی جاتی ہیں جن میں بعض ممبران شرکت کرتے ہیں۔

حقیقی ممبران
1990 میں اسمبلی کے قیام کے بعد سے آج تک ، عالم اسلام کے ممتاز علماء اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کی سپریم کونسل کے حقیقی ممبران ہونے کی حیثیت سے اپنے فرائض انجام دیتے رہے ہیں۔ ان میں سے بعض وہ افراد جو شہادت یا انتقال کی وجہ سے رخصت ہو گئے اور بعض اس سے زیادہ اہم ذمہ داریوں کے پیش نظر اسمبلی کی رکنیت سے سبکدوش ہوگئے ان کے نام درج ذیل ہیں:
آیت اللہ ہاشمی شاہرودی(ایران)، آیت اللہ فضل اللہ (لبنان)، آیت اللہ حکیم و آیت اللہ آصفی (عراق)، آیت اللہ الفضلی (سعودی عرب)، آیت اللہ العظمیٰ جوادی آملی (ایران)
 
مندرجہ ذیل افراد اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کی سپریم کونسل کے حقیقی ممبران ہیں:
ـ آیت اللہ محسن اراکی (از ایران)؛
ـ آیت اللہ محمدعلی تسخیری (از ایران)؛
ـ حجۃ الاسلام محمد علی محسن تقوی (از هندوستان)؛
ـ حجۃ الاسلام سید عمار الحکیم (از عراق)؛
ـ حجۃ الاسلام نبیل الحلباوی (از سوریه)؛
ـ آیت اللہ سید احمد خاتمی (از ایران)؛
ـ آیت اللہ قربانعلی دری نجف آبادی (از ایران)؛
ـ حجۃ الاسلام سید هاشم الشخص (از عربستان)؛
ـ آیت اللہ عیسی احمد قاسم (از بحرین)؛
ـ آیت اللہ محسن مجتهد شبستری (از ایران)؛
ـ آیت اللہ محمدآصف محسنی (از افغانستان)؛
ـ حجۃ الاسلام محمود محمدی عراقی (از ایران)؛
ـ حجۃ الاسلام سید مرتضی العاملی (از کنیا)؛
ـ حجۃ الاسلام حسین المعتوق (از کویت)؛
ـ حجۃ الاسلام سید حسن نصرالله (از لبنان)؛
ـ حجۃ الاسلام سید ساجد علی نقوی (از پاکستان)؛
ـ حجۃ الاسلام سید ابوالحسن نواب (از ایران)؛
ـ حجۃ الاسلام عباس واعظ طبسی (از ایران)؛
ـ ڈاکٹر علی اکبر ولایتی (از ایران)؛
ـ آیت اللہ مهدی ہادوی تهرانی (از ایران).

عالمی اہل بیت اسمبلی

اہل بیت (ع) عالمی اسمبلی، ایک عالمی اور غیر سرکاری تنظیم کی حیثیت سے، عالم اسلام کی ممتاز شخصیات کے ذریعے تشکیل دی گئی ہے۔ اہل بیت علیہم السلام کو مرکز فعالیت اس لیے انتخاب کیا گیا ہے کیونکہ اسلامی تعلیمات میں قرآن کریم کے ہمراہ، اہل بیت اطہار علیہم السلام ایک مقدس مرکزیت کی حیثیت رکھتے ہیں جنہیں تمام مسلمان مانتے ہیں۔

اہل بیت (ع) عالمی اسمبلی کا آئین نامہ آٹھ فصلوں اور تینتیس شقوں پر مشتمل ہے۔

  • ایران - تهران - بلوارکشاورز - نبش خیابان قدس - پلاک 246
  • 888950827 (0098-21)
  • 888950827 (0098-21)

ہم سے رابطہ کریں

موضوع
دوستوں کوارسال کریں
خط
8-1=? سیکورٹی کوڈ