اسمبلی کی خبریں

مهلت ثبت نام جایزه جهانی ۱۱۴ تا بیستم تیر ماه تمدید شد
  • آیت اللہ رمضانی: غدیر کا پیغام انسانی معاشرے کو دین کی درست تفہیم ہے

    آیت اللہ رمضانی: غدیر کا پیغام انسانی معاشرے کو دین کی درست تفہیم ہے

     آیت اللہ رضا رمضانی نے عید سعید غدیر کی مناسبت سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عید کی مبارک باد پیش کی اور کہا: عید غدیر کی طرف جس آیت «الْيَوْمَ أَكْمَلْتُ لَكُمْ دِينَكُمْ وَ أَتْمَمْتُ عَلَيْكُمْ نِعْمَتِي» کا اشارہ ہے اور جس میں دین کے کامل ہونے کا اعلان ہے اس کا مطلب یہ ہے کہ دین غدیر میں مکمل ہوا اور اگر غدیر نہ ہوتی تو دین ناقص رہ جاتا۔
    انہوں نے یہ بیان کرتے ہوئے کہ امامت اور ولایت سے دین مکمل ہوا واضح کیا: اگر امامت اور ولایت نہ ہوتی تو دین بے روح اور بے سہارا رہ جاتا۔
    اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکریٹری جنرل نے اس بات کی طرف اشاہ کرتے ہوئے کہ امام دین کا محافظ ہوتا ہے کہا: دین آنحضور صلی اللہ علیہ و آلہ و سلم کے 23 سالہ دور میں مکمل ہوا اور اگر امامت نہ ہوتی تو پیغمبر اکرم (ع) کی یہ تمام زحمتیں ضائع ہو جاتیں۔
    اس بات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہ جب تک انسان موجود ہیں اور نبی تمام انسانیت کے نبی ہیں، دین بھی موجود ہے، انہوں نے کہا: کافر کہتے تھے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ و سلم کی وفات کے بعد ، جو کچھ ان 23 سالوں میں ہوا وہ سب ختم ہو جائے گا، لیکن نبی نے غدیر کے واقعہ سے دشمنوں کو مایوس کیا۔
    آیت اللہ رمضانی نے بیان کیا: اسلامی معاشرے کے رہنما کی حیثیت سے پیغمبر اکرم (ص) کی حکمت نے ان سے دین کی حفاظت کا فرض طے کرنے کا تقاضا کیا اور غدیر کے واقعے نے اس فرض کا تعین کیا۔
    اہل بیت (ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل نے پیغمبر اکرم (ص) کو دین کے تئیں ہر کسی سے زیادہ دلسوز سمجھا اور کہا: سب سے بہتر شخص جو علم لدنی کا مالک اور مقام عصمت پر فائز تھا اور دین کو اس کے حوالے کیا جانا چاہیے تھا خدا کی جانب سے منصوب ہوا اور نبی اکرم (ص) کے واسطے اس کا اعلان ہوا۔
    انہوں نے یہ بیان کیا کہ روایتوں میں مشہور قول یہ ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ و سلم کے خطبہ غدیر کی تلاوت کرتے وقت 18،000 لوگوں کا مجمع تھا، کہا: پیغمبر اکرم (ص) کا یہ خطبہ کوئی معمولی خطبہ نہیں ہے اور پھر تین دن تک مرد اور حتیٰ عورتیں بھی آ کر بیعت کرتی رہیں۔
    آیت اللہ رمضانی نے نشاندہی کی: واقعہ غدیر میں دین اپنے سرپرست کو جاننا چاہتا ہے، اور جس طرح حضور (ص) کو مرجعیت حاصل ہے ، اسی طرح امام کو بھی علمی، روحانی، سیاسی اور سب سے بالاتر دینی مرجعیت حاصل ہونا چاہیے۔
    اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل نے اس حقیقت کا حوالہ دیتے ہوئے کہ واقعہ غدیر میں لوگوں کو یہ بتلا دیا گیا کہ عالم اسلام کی دینی مرجعیت کا عہدیدار کون ہو گا کہا: غدیر کا تعلق صرف شیعوں سے نہیں ہے بلکہ غدیر تمام مسلمانوں کے لیے ہے۔

    * غدیر کا مسئلہ آج اسلامی معاشرے کی نشوونما میں موثر ثابت ہو سکتا ہے
    آیت اللہ رمضانی نے یہ بیان کرتے ہوئے کہ غدیر کا مسئلہ، آج اسلامی معاشرے کی ترقی کے لیے موثر کردار ادا کرنے والا ثابت ہوسکتا ہے، کہا: آںحضور (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) اپنی امت کی سب سے بڑی عید عید غدیر سمجھتے ہیں اور اس واقعے کا تجزیہ و تحلیل ہونا چاہیے۔
    آیت اللہ رمضانی نے مزید کہا: امیر المومنین (ع) کو غدیر کے دن ایک کامل ترین، زاہد ترین اور شجاع ترین انسان کے طور پر متعارف کروایا تاکہ دشمن مایوس ہو جائیں کہ اب وہ کچھ نہیں کر سکتے۔
    اہل بیت (ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل نے اس بات کی طرف اشارہ کیا کہ اگر آج ہم غدیر کی تعلیمات پر توجہ دیں گے تو ہم دین کے تحفظ میں اس کے کردار کو سمجھیں گے انہوں نے کہا: غدیر انسانی معاشرے کو دین کی انتہائی درست تفہیم فراہم کرتا ہے۔
    انہوں نے بیان کیا کہ غدیری تحریک نے دانشگاہ امام باقر و امام صادق (علیھما السلام) کو وجود بخشا، مزید کہا: اگر یہ غدیر نہ ہوتی تو دین اور قرآن کی سچائی نظر نہ آتی کیونکہ لوگ اسے آسانی سے مسخ کر دیتے۔
    آیت اللہ رمضانی نے دین کی صحیح تفہیم کے فقدان کو معاشرے کے انحراف کا سبب سمجھا اور کہا: جب بھی دین بدکرداروں اور حکمرانوں کے قبضے میں ہوگا، اسلامی معاشرہ ذلیل ہوگا انسانی وقار ایسے معاشرے میں نظر آئے گا جہاں امام اور خدا کے ولی معاشرے میں موجود ہوں اور وہ حکومت کریں۔
    مجلس خبرگان رہبری میں گیلان کے لوگوں کے نمائندے نے اس بات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہ امام اجازت نہیں دیتا معاشرہ انحراف کا شکار ہو، واضح کیا: پوری تاریخ میں امامت کو ایسا ہونا چاہیے۔ آج بھی یہ قیادت اور امامت بطور امام ہادی حضرت ولی عصر (ع) کے ہاتھ میں ہے۔
    انہوں نے کہا: "جہاں بھی امامت صحیح طریقے سے اپنا کردار ادا کرے معاشرہ تمام انحرافات سے نجات پا جاتا ہے۔

    آیت اللہ رمضانی نے مزید کہا: "جہاں بھی نائب امام نے معاشرے میں اپنے سماجی اور سیاسی کردار کو مضبوط بنایا وہاں دین سماجی میدان میں محسوس ہونے لگے گا۔
    اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل نے اس بات کی طرف اشارہ کیا کہ غدیر کا ایک اہم سبق دین کو سیاست سے الگ کرنا نہیں ہے اور کہا: جب پیغمبر(ص) لوگوں کو علی (ع) کی بیعت کرنے کی دعوت دیتے ہیں۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ سماجی اور سیاسی معاشرے میں دین کا نمایاں کردار نظر آنا چاہیے۔

    * ایران کا اسلامی انقلاب امامت کا مظہر ہے
    انہوں نے غدیر کو مسلمانوں کا سب سے اہم اجتماع قرار دیا کہ جس میں امام کو معاشرے کے لیے متعارف کروایا گیا اور مزید کہا: "اس واقعہ نے انسانی تاریخ کے مستقبل میں مسلمانوں کی صورت حال کا تعین کیا۔"
    آیت اللہ رمضانی نے مزید کہا کہ ایران کا اسلامی انقلاب امامت کا مظہر ہے ہم سب کو اس انقلاب کی قدر کرنی چاہیے اور سماجی میدان میں دین کی تبلیغ عدل و انصاف کے ساتھ ظاہر ہونا چاہیے۔"
    اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل نے اس بات کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہ عدالت دین کے بغیر کوئی معنی نہیں رکھتی اور دین اور عدالت کے درمیان واضح رشتہ پایا جاتا ہے کہا: آج ہمیں کوشش کرنا چاہیے کہ لوگ اسلامی نظام میں عدل و انصاف کا مزہ چکھیں اور یہ ایک الہی وعدہ ہے۔
    انہوں نے یہ بیان کرتے ہوئے کہ اگر امام حکومت حق تشکیل دیں تو عوام سلامتی اور عدالت حاصل کریں گے کہا: اسلامی ملک میں حکومت کو ایسے کارنامے دکھلانا چاہیے تاکہ لوگ مایوسی کا شکار نہ ہوں۔

  • تصویری رپورٹ/ اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی سے منسلک ثقافتی انجمنوں کا اجلاس

    تصویری رپورٹ/ اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی سے منسلک ثقافتی انجمنوں کا اجلاس

    اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی سے منسلک ثقافتی انجمنوں کے عہدیداروں کا محرم الحرام کی آمد سے قبل اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے شعبہ قم میں اجلاس منعقد ہوا۔

     

     

  • شیخ ابراہیم زکزاکی کی رہائی کے موقع پر اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکریٹری جنرل کا تہنیتی پیغام

    شیخ ابراہیم زکزاکی کی رہائی کے موقع پر اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکریٹری جنرل کا تہنیتی پیغام

    اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکریٹری جنرل آیت اللہ رضا رمضانی نے نائیجیریا کی تحریک اسلامی کے سربراہ حجۃ الاسلام و المسلمین ابراہیم زکزاکی کو ایک پیغام ارسال کر کے ان کی آزادی پر انہیں مبارک باد پیش کی ہے۔
    آیت اللہ رمضانی کے اس پیغام میں شیخ زکزاکی اور نائیجیریا کے مظلوم شیعوں کے دفاع میں انجام پانی والی کاوشوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے اس راہ میں سرگرم تمام افراد، انسانی حقوق کی تنطیموں، نائیجیریا کی اسلامی تحریک کے وکلاء اور اس ملک کے جانثار عوام کا شکریہ ادا کیا گیا ہے۔
    اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکریٹری جنرل نے اپنے پیغام کے دوسرے حصے میں، شیخ زکزاکی کے تئیں علماء اور مختلف ادیان و مذاہب کے پیروکاروں کی جانب سے کی گئی حمایتوں کو بین الادیان باہمی تعاون اور آزادی، عدالت اور معنویت کی راہ میں تقریب بین المذاہب کے لیے بہترین نمونہ قرار دیا۔
    اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکریٹری جنرل کا شیخ زکزاکی کو ارسال کئے گئے پیغام کا ترجمہ حسب ذیل ہے:


    بسم اللہ الرحمن الرحیم
    جناب حجة الاسلام والمسلمین حاج شیخ ابراهیم زاکزاکی دام عزه العالی
    سلام علیکم
    آپ جناب اور زوجہ مکرمہ کی جیل سے رہائی کی خبر نے ہمارے اور تمام حریت پسند مسلمانوں کے لیے عید غدیر کی خوشی کو دوبالا کر دیا۔
    آپ کی غیر قانونی قید اہل بیت(ع) کے غم و اندوہ کے دنوں یعنی ماہ صفر میں شروع ہوئی اور خاندان اہل بیت(ع) کی خوشی کے ایام میں ختم ہوئی، یہ ہمارے لیے ایک متاثر کن تقارن اور جوڑ ہے۔
    ان چھے برسوں میں اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی نے آپ اور نائیجیریا کے مظلوم شیعوں کے دفاع کے لیے قانونی، سیاسی، تبلیغاتی کاوشوں سے لے کر میڈیا اور انسانی حقوق کے ذریعے ہر طرح کی کوششیں کیں۔ اس لیے کہ آپ صلح و آشتی اور قانون پسندی کی علامت اور تمام ادیان کے پیروکاروں کے لیے پرامن بقائے باہمی کے پیامبر اور ہمیشہ انسانی حقوق و آزادی کے پاسباں رہے ہیں۔
    آج ہم خود پر لازم سمجھتے ہیں کہ پوری دنیا میں اسمبلی کے تمام اراکین کی جانب سے انتہائی شکریہ ادا کرتے ہیں؛ ان انسانی حقوق کے کارکنان اور تنظیموں کا جو آپ کی حمایت کرتے رہے ہیں، وکلاء کی ٹیم اور ان ججوں کا جنہوں نے دونوں عدالتوں میں آپ کی بے گناہی کا حکم دیا، اور سب سے بڑھ کر اس وفادار قوم اور عوام کا شکریہ ادا کرتے ہیں جنہوں نے مسلسل چھے سال اپنی جانوں کو ہتھیلی پر رکھ کر پرامن ریلیاں نکالیں اور آپ کی آزادی کا ہمیشہ مطالبہ کیا۔
    نیز ضروری سمجھتے ہیں کہ ان علماء اور دیگر ادیان و مکاتب کے ان پیروکاروں کا بھی شکریہ ادا کریں جنہوں نے نائیجیریا کے مظلوم شیعوں کے ہم رکاب حمایت اور احتجاج کیا۔ یہ تجربہ، بین الادیان میں تعاون اور آزادی، عدالت اور معنویت کی راہ میں تقریب بین المذاہب کا ایک بہترین نمونہ ہے۔
    بارگاہ رب العزت میں شکرگزار ہیں اور اس خوشی کے موقع پر آپ کے لیے صحت و سلامتی اور توفیقات میں اضافہ، نیز زوجہ مکرمہ جو چھے شہید بیٹوں کی ماں ہیں کے لیے صحت و سلامتی کی بارگاہ خداوندی سے دعا مانگتے ہیں۔
    ﴿ما عِندَكُمْ يَنْفَدُ وَمَا عِنْدَ اللَّهِ بَاقٍ وَلَنَجزِيَنَّ الَّذِينَ صَبَروا أجرَهُمْ بِأحسَنِ ما كَانُوا يَعمَلُون﴾
    رضا رمضانی
    سیکریٹری جنرل برائے اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی

    خیال رہے کہ اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کی جنرل اسمبلی کے رکن شیخ زکزاکی اور ان کی زوجہ زینت ابراہیم 28 جولائی 2021 کو نائیجیریا کی عدالت کے حکم سے، چھے سال کے بعد جیل سے رہا ہو گئے۔

  • اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل کے پیغام سے اسلام آباد میں عظمت غدیر و عاشوراء کانفرنس کا انعقاد

    اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل کے پیغام سے اسلام آباد میں عظمت غدیر و عاشوراء کانفرنس کا انعقاد

    مبلغین امامیہ کا عظمت غدیر و عاشوراء کے زیر عنوان پانچواں عظیم اجتماع علامہ راجہ ناصر جعفری کی موجودگی میں اسلام آباد میں منعقد ہوا جس میں اہل بیت(ع) عالمی اسمبلی کے سیکرٹری جنرل آیت اللہ رمضانی کا پیغام بھی نشر کیا گیا۔

  • تصویری رپورٹ/ 114 ورلڈ ایوارڈ کے سیکرٹریٹ کو موصولہ آثار کی ججمنٹ کا نہائی مرحلہ

    تصویری رپورٹ/ 114 ورلڈ ایوارڈ کے سیکرٹریٹ کو موصولہ آثار کی ججمنٹ کا نہائی مرحلہ

    114 ورلڈ ایوارڈ کے سیکرٹریٹ کو موصولہ آثار کی ججمنٹ کے نہائی مرحلے میں سات ریفریوں نے شرکت کی۔

الحقیقة
الحقیقة

نرم افزار الکترونیک الحقیقة کما هی

 

Alhaqiqa.jpg

 

سریال صوتی الحقیقه در قالب زبان عربی، با محوریت کتاب ماندگار "المراجعات" شامل گفتگو بین سید عبدالحسین شرف الدین از علمای برجسته شیعه در لبنان و شیخ الأزهر سلیم البشری از علمای اهل سنت در مصر است.

دانلود نرم افزار

دانلود نسخه اندروید

ملحقہ مراکز اور ویب سائٹس

عالمی اہل بیت اسمبلی

اہل بیت (ع) عالمی اسمبلی، ایک عالمی اور غیر سرکاری تنظیم کی حیثیت سے، عالم اسلام کی ممتاز شخصیات کے ذریعے تشکیل دی گئی ہے۔ اہل بیت علیہم السلام کو مرکز فعالیت اس لیے انتخاب کیا گیا ہے کیونکہ اسلامی تعلیمات میں قرآن کریم کے ہمراہ، اہل بیت اطہار علیہم السلام ایک مقدس مرکزیت کی حیثیت رکھتے ہیں جنہیں تمام مسلمان مانتے ہیں۔

اہل بیت (ع) عالمی اسمبلی کا آئین نامہ آٹھ فصلوں اور تینتیس شقوں پر مشتمل ہے۔

  • ایران - تهران - بلوارکشاورز - نبش خیابان قدس - پلاک 246
  • 888950827 (0098-21)
  • 888950827 (0098-21)

ہم سے رابطہ کریں

موضوع
دوستوں کوارسال کریں
خط
2+1=? سیکورٹی کوڈ